83

جو چاہے آپ کا حسن کرشمہ ساز کرے – اقصی محمود

لگتا ہے پاکستان کرکٹ بورڈ کے چیف ایگزیکٹو وسیم خان پاکستان کرکٹ میں اس وقت تمام سیاہ و سفید کے مالک بن چکے ہیں۔ کئی بڑے فیصلے کے پیچھے ان کا مرکزی کردار ہوتا ہے۔سرفراز کو بغیر کسی وجہ کے کپتانی سے برطرف کر نے کے پیچھے بھی سُپر مین وسیم خان کا نام سامنے آتا ہے۔ ہیڈ کوچ اور چیف سلیکٹر مصباح الحق کی جانب سے کیے جانے والے فیصلوں کے پیچھے بھی وسیم خان ہی نظر آتے ہیں، انھوں نے اپنی دھاک ہر جگہ بٹھائی ہوئی ہے۔

چیمپیئنز ٹرافی 2017 کے ونر اورآئی سی سی ورلڈ ٹی 20 کے نمبر 1 کپتان سرفراز احمد سے تینوں فارمیٹ سے کپتانی کا تخت چھین لینا حیران کن فیصلہ ہے۔سری لنکا کےخلاف بابر اعظم کو نائب کپتان بنا کر پی سی بی نے سر فراز احمد کے لئے خطرے کی گھنٹی بجا دی تھی۔ بابر اعظم ٹی 20 کے نمبر 1 بیٹس مین ہیں لیکن اس طرح اچانک بابراعظم پر کپتانی کی ذمہ داری ڈال دینا ان کے اپنے کرئیر کے لئے بھی نقصان دے ہوسکتا ہے۔ سرفراز احمد کے لئے ان مشکلات کا آغاز ورلڈ کپ 2019 اور پاکستان میں ہونے والی ٹی 20 سری لنکا سریز میں ناکامی کے بعد سے ہوا۔لیکن بات یہ بھی سامنے آرہی ہے کہ سرفراز احمد کی عالمی مقابلے میں بیٹنگ میں قابلِ ذکر کارکردگی نہ ہونے کے برابر ہے۔ سرفراز احمد کی 2007 سے لے کر اب تک کی ٹی20 کی بیٹنگ پرفارمنس پر نظر دوڑائی جائے تو انھوں نے ٹی20 میں 58 میچز میں 812 رنز اسکور کیے اور بحیثیت کپتان 37میچز میں سے 29 جیتے اور 9 میچز میں ناکام رہے۔اور آئی سی سی ورلڈ ٹی20 کے نمبر 1 کپتان بن کر سامنے آئے لیکن پھر بھی سرفراز احمد کو ٹی20 کے فارمیٹ سے سبکدوش کردیا گیا۔ سوال یہ ہے کہ ورلڈ کپ اور ٹی20 سریز میں سری لنکا کے خلاف ناکامی کا سارا ملبہ سرفراز پر ہی کیوں ڈالا جا رہا ہے۔
کیا گراؤنڈ میں صرف سرفراز مقابل ٹیم سے مقابلہ کررہے ہوتے ہیں؟ سرفراز احمدجس کی کپتانی میں آئی سی سی ٹی 20 میں پاکستان کی نمبر 1 پوزیشن رہی تھی۔ اُس کی کپتانی میں جتنے میچ کھیل گئے چاہے وہ ٹیسٹ میچ ہوں ، ون ڈے ہو یا ٹی 20 ہو سرفراز احمد پاکستان کے کامیاب ترین کپتانوں میں سے ایک کپتان نظر آتے ہیں۔ بحیثیت کپتان سرفراز احمد نے نہ صرف کپتانی کو بہتر بنانے کی کوشش کی بلکہ ٹیم کو بھی بہتر انداز میں ساتھ لے کر چلنے کی کوشش کی۔ٹیم کی پرفارمنس میں ہر ایک کی محنت جڑی ہوتی ہےلیکن یہاں یہ دیکھنے میں آیاکہ کہیں بالرز ن وفا نہیں کی تو کہیں بیٹس مین نے ناکامی کا مظاہرہ کیا۔ ابھی حال ہی میں ہونے والے ٹی20 میں پاکستان کو آسٹریلیا کے خلاف عبرت ناک شکست کا سامنا کرنا پڑا۔اور 2019 پاکستانی ٹی 20 ٹیم کےلئے ایک ڈراؤنے خواب کے ساتھ اختتام پذیر ہوا۔
ابھی آسٹریلیا کی خلاف ہونے والی شکست سے اندازہ لگایا جاسکتا ہے کہ مصباح الحق کے جلد بازی میں کیے گئے فیصلوں کی وجہ سےٹیم کو ٹی20 سریز میں بدترین شکست کا سامنا کرنا پڑااور پوری ٹیم کی ناقص کارکردگی کی کلائی کھل گئی۔ پی سی بی کو ایسی حکمتِ عملی بنانی ہوگی جس کے خاطر خواہ
نتائج سامنے آئیں۔

اس بلاگ پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں