قوا عد و ضوابط

1- ادیب کے ایڈمنز، مدیران کا کوئی خاص سیاسی یا فکری فہم ہوسکتا ہے، مگر ان کے نقطہ نظر سے ہٹ کر یا متصادم تحریروں کی اشاعت پر بھی پابندی نہیں، شرط یہ ہے کہ ادب اور توازن سے بات کہی گئی ہو۔
2- ادیب کسی بھی موضوع و خیال کو موضوع بحث بنانے میں کوئی رکاوٹ محسوس نہیں کرے گا جب تک کہ وہ ادیب کے مسلک اعتدال کو نقصان نہ پہنچا رہا ہو۔
3- ادیب تمام دینی و لادینی، سیاسی و غیر سیاسی یا دوسری تنظیموں اور قیادت کی حمایت و تنقید میں لکھی گئی ایسی تمام تحاریر کو شائع کرے گا جن میں تنقید و حمایت کے آداب ملحوظ رکھے گئے ہوں۔
4۔ ادیب خود کو کسی دینی و لادینی، سیاسی و غیر سیاسی تنظیم یا کسی گروہ و مکتب فکر کا نمائندہ بننے سے بچنے کے لیے مخصوص تحاریر روکنے کا مجاز ہوگا-
5- ادیب تمام لکھاریوں کو فقہی و فروعی آراء اختیار کرنے اور انھیں اپنی تحریر میں شامل کرنے کی آزادی دیتا ہے لیکن کسی بھی فقہی و فروعی بحث پر مناظرے کی اجازت نہیں ہوگی۔